محمد ارشد، ریلوے اسکاؤٹ، کینٹ ریلوے اسٹیشن کراچی، سندھ

محمد ارشد، ریلوے اسکاؤٹ، کینٹ ریلوے اسٹیشن کراچی، سندھ

Share

 

"میں گزشہ 12 برسوں سے پولیو کے خاتمے کے لئے کام کر رہا ہوں۔ ایک سے زائد مواقع پر مجھے دھمکی دی گئی ہے اور یہاں تک کہ میرے گھر والے بھی مجھے کہتے ہیں کہ اس کے نتائج کے پیش نظر میں پولیو پروگرام میں کام کرنا بند کر دوں، پھر بھی میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ پولیو کے خاتمے کے لئے کوشش جاری رکھنا میری اخلاقی ذمہ داری ہے۔ فی الوقت میں ان ٹیموں کا انچارج ہوں جو کراچی چھاؤنی ریلوے اسٹیشن پر پولیو کے قطرے پلاتی ہے۔ میں اپنے طور پر یہ یقینی بناتا ہوں کہ ویکسی نیٹرز کی کارکردگی ہمیشہ اعلیٰ معیار کو قائم رکھے اور کوئی ایک بچہ بھی پولیو کے قطرے پینے سے محروم نہ رہے۔"